سو درد

 

سو درد ہیں، سو راحتیں

سب ملا دلنشیں

ایک تو ھی نہیں

 

روکھی روکھی سی یہ ہوا

اور سوکھے پتّے کی طرح

شھر کی، سڑکوں پہ میں

لاوارث اُڑتا ہوا

سو راستے

پر تیری راہ نہیں

 

سو درد ہیں، سو راحتیں

سب ملا دلنشیں

ایک تو ھی نہیں

 

بہتا ہے، پانی بہنے دے

وقت کو یونہی، رہنے دے

دریا نے کروٹ لی ہے تو

ساحلوں کو سہنے دے

سو حسرتیں

پر تیرا غم نہیں

 

سو درد ہیں، سو راحتیں

سب ملا دلنشیں

ایک تو ھی نہیں

 

شاعر : گلزار

 

یہاں سے سنئے

This entry was posted in شاعرى. Bookmark the permalink.

Leave a Reply

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out / Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out / Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out / Change )

Google+ photo

You are commenting using your Google+ account. Log Out / Change )

Connecting to %s