آوارہ

آوارہ
 
 
شہر کي رات اور ميں ناشاد و ناکارہ پھروں
جگمگاتي جاگتي سڑکوں پہ آوارہ پھروں
غير کي بستي ہے کب تک در بدر مارا پھروں

اے غم ِ دل کيا کروں، اے وحشت ِ دل کيا کروں

جھلملاتے قمقموں کي راہ ميں زنجير سي
رات کے ہاتھوں ميں دن کي موہني تصوير سي
ميرے سينے پر مگر چلتي ہوئي شمشير سي

اے غم ِ دل کيا کروں، اے وحشت ِ دل کيا کروں

يہ روپہلي چھاؤں، يہ آکاش پر تاروں کا جال
جيسے صوفي کا تصور، جيسے عاشق کا خيال
آہ! ليکن کون جانے کون سمجھے جي کا حال

اے غم ِ دل کيا کروں، اے وحشت ِ دل کيا کروں

پھر وہ ٹوٹا اک ستارہ، پھر وہ چھوٹي پھلجھڑي
جانے کس کي گود ميں آئے يہ موتي کي لڑي
ہوک سي سينے ميں اٹھي، چوٹ سي دل پر پڑي

اے غم ِ دل کيا کروں، اے وحشت ِ دل کيا کروں

رات ہنس ہنس کر يہ کہتي ہے کہ ميخانے ميں چل
پھر کسي شہناز ِ لالہ رخ کے کاشانے ميں چل
يہ نہيں ممکن تو پھر اے دوست! ويرانے ميں چل

اے غم ِ دل کيا کروں، اے وحشت ِ دل کيا کروں

ہر طرف بکھري ہوئي رنگينياں رعنائياں
ہر قدم پر عشرتيں ليتي ہوئي انگڑائياں
بڑھ رہي ہيں گود پھيلائے ہوئے رسوائياں

اے غم ِ دل کيا کروں، اے وحشت ِ دل کيا کروں

راستے ميں رک کے دم لے لوں، ميري عادت نہيں
لوٹ کر واپس چلا جاؤں، ميري فطرت نہيں
اور کوئي ہم نوا مل جائے، يہ قسمت نہيں

اے غم ِ دل کيا کروں، اے وحشت ِ دل کيا کروں

منتظر ہے ايک طوفان ِ بلا ميرے ليے
اب بھي جانے کتنے دروازے ہيں وا ميرے ليے
پر مصيبت ہے ميرا عہد ِ وفا ميرے ليے

اے غم ِ دل کيا کروں، اے وحشت ِ دل کيا کروں

جي ميں آتا ہے کہ اب عہد ِ وفا بھي توڑ دوں
ان کو پا سکتا ہوں ميں، يہ آسرا بھي چھوڑ دوں
ہاں مناسب ہے يہ زنجير ِ ہوا بھي توڑ دوں

اے غم ِ دل کيا کروں، اے وحشت ِ دل کيا کروں

اک محل کي آڑ سے نکلا وہ پيلا ماہتاب
جيسے ملا کا عمامہ، جيسے بنيے کي کتاب
جيسے مفلس کي جواني، جيسے بيوہ کا شباب

اے غم ِ دل کيا کروں، اے وحشت ِ دل کيا کروں

دل ميں اک شعلہ بھڑک اٹھا ہے آخر کيا کروں
ميرا پيمانہ چھلک اٹھا ہے آخر کيا کروں
زخم سينے کا مہک اٹھا ہے آخر کيا کروں

اے غم ِ دل کيا کروں، اے وحشت ِ دل کيا کروں

مفلسي اور يہ مظاہر ہيں نظر کے سامنے
سينکڑوں چنگيز و نادر ہيں نظر کے سامنے
سينکڑوں سلطان جابر ہيں نظر کے سامنے

اے غم ِ دل کيا کروں، اے وحشت ِ دل کيا کروں

لے کے اک چنگيز کے ہاتھوں سے خنجر توڑ دوں
تاج پر اس کے دمکتا ہے جو پتھر توڑ دوں
کوئي توڑے يا نہ توڑے، ميں ہي بڑھ کر توڑ دوں

اے غم ِ دل کيا کروں، اے وحشت ِ دل کيا کروں

بڑھ کے اس اندر سبھا کا ساز و ساماں پھونک دوں
اس کا گلشن پھونک دوں، اس کا شبستاں پھونک دوں
تخت ِ سلطاں کيا ميں سارا قصر ِ سلطاں پھونک دوں

اے غم ِ دل کيا کروں، اے وحشت ِ دل کيا کروں

جي ميں آتا ہے يہ مردہ چاند تارے نوچ لوں
اس کنارے نوچ لوں، اور اس کنارے نوچ لوں
ايک دو کا ذکر کيا، سارے کے سارے نوچ لوں

اے غم ِ دل کيا کروں، اے وحشت ِ دل کيا کروں

 

اسرار الحق مجاز

This entry was posted in شاعرى. Bookmark the permalink.

17 Responses to آوارہ

  1. rang says:

    Asalam Alaikum
     
    Wah Wah Kamal ho gaya.  Itne din baad aaj aap ki space ka chakar lagaya to nayi tazi Awara entry payi.  Bohat hi khoob.  Intezaar ka phal phal meetha hota hai suna to tha magar aaj dekh bhi liye.
     
    Keep posting gr8 entries like this one
    Peace!

  2. Tarique says:

    عشق ھو جائے کسی سے کوئی چارہ تو نہیں صرف مسلم کا محمد پہ اجارہ تو نہیں

  3. Tarique says:

    ache ashar hein,
    mere taraf se yeh rahe
     
    ko_ii haath bhii na milaayegaa, jo gale miloge tapaak se ye naye mizaaj kaa shahar hai, zaraa faasale se milaa karo
     
     
    very nice space🙂

  4. Unknown says:

    Salam,
    kia hal hain?Ramazanoo men waqt kam he milta he isleye apkie blog men kam he ana hota he, lekin jab bhe aae kuch naya he paya men ne aapke space, aur ye he sab se ache bat he is blog ke.
     
    shairi se kuch zayada mujhe laggaoo nahi lekin apke blog ke shaire kafi ache hen.aur ye awara to sab pe bari he.
     
    wase baten ge aap ne ye post kun ke he koi khas wajah?
     
    take care
    Wa Salam
     

  5. Unknown says:

    ستارے مل نہيں سکتے

    (رضي الدين رضي)

     

    عجب دن تھے محبت کے عجب موسم تھے چاہت کے کبھي گر ياد آ جائيں تو پلکوں پر ستارے جھلملاتے ہيں کسي کي ياد ميں راتوں کو اکثر جاگنا معمول تھا اپنا کبھي گر نيند آ جاتي تو ہم يہ سوچ ليتے تھے ابھي تو وہ ہمارے واسطے رويا نہيں ہوگا ابھي سويا نہيں ہوگا ابھي ہم بھي نہيں روتے ابھي ہم بھي نہيں سوتے سو پھر ہم جاگتے اور اس کو ياد کرتے تھے اکيلے بيٹھ کر ويران دل آباد کرتے تھے ہمارے سامنے تاروں کے جھرمٹ ميں اکيلا چاند ہوتا تھا جو اس کے حسن کے آگے بہت ہي ماند ہوتا تھا فلک پر رقص کرتے انگنت روشن ستاروں کو جو ہم ترتيب ديتے تھے تو اس کا نام بنتا تھا ہم اگلے روز جب ملتے تو گزري رات کي ہر بے کلي کا ذکر کرتے تھے ہر اک قصہ سناتے تھے کہاں، کس وقت، کس طرح سے دل دھڑکا، بتاتے تھے ميں جب کہتا کہ "جاناں آج تو ميں رات کو اک پل نہيں سويا" تو وہ خاموش رہتي تھي پر اس کي نيند ميں ڈوبي ہوئي دو جھيل سي آنکھيں اچانک بول اٹھتي تھيں ميں جب اس کو بتاتا تھا کہ "ميں نے رات کو روشن ستاروں ميں تمہارا نام ديکھا ہے" تو وہ کہتي "رضي تم جھوٹ کہتے ہو ستارے ميں نے ديکھے تھے اور ان روشن ستاروں ميں تمہارا نام لکھا تھا" عجب معصوم لڑکي تھي مجھے کہتي تھي "لگتا ہے کہ اب اپنے ستارے مل ہي جائيں گے" مگر اس کو خبر کيا تھي کنارے مل نہيں سکتے محبت کرنے والوں کے ستارے مل نہيں سکتے

  6. Unknown says:

    آوارہ سجدے  
      اک يہي سوز ِ نہاں کل ميرا سرمايہ ہے دوستو! ميں کسے يہ سوز ِ نہاں نذر کروں کوئي قاتل سر ِ مقتل نظر آتا ہي نہيں کس کو دل نذر کروں اور کسے جاں نذر کروں
     
    تم بھي محبوب مرے، تم بھي ہو دلدار ميرے آشنا مجھ سے مگر تم بھي نہيں، تم بھي نہيں ختم ہے تم پہ مسيحا نفسي، چارہ گري محرم ِ درد ِ جگر تم بھي نہيں، تم بھي نہيں
     
    اپني لاش آپ اٹھانا کوئي آسان نہيں دست و بازو مرے ناکارہ ہوئے جاتے ہيں جن سے ہر دور ميں چمکي ہے تمہاري دہليز آج سجدے وہي آوارہ ہوئے جاتے ہيں
     
    دور منزل تھي مگر ايسي بھي کچھ دور نہ تھي لے کے پھرتي رہي رستے ہي ميں وحشت مجھ کو ايک زخم ايسا نہ کھايا کہ بہار آ جاتي دار تک لے کے گيا شوق ِ شہادت مجھ کو
     
    راہ ميں ٹوٹ گئے پاؤں تو معلوم ہوا جز مرے اور ميرے راہنما کوئي نہيں ايک کے بعد خدا ايک چلا آتا تھا کہہ ديا عقل نے تنگ آ کے "خدا کوئي نہيں"
    کيفي اعظمي

  7. Unknown says:

    Salam,
    Question is still pending?
     
    Wa Salam

  8. Tarique says:

    Assalam-U-Alaikum,
     
    Shadow Class apkay dono Ghazal bohat achay hain, Awara Sajday aapnay pahlay bhi mairay spaces main post ki thi uswaqt bhi aur iswaqt bhi mujhay pasand aai hain🙂
     
    Sadia Zunair Ge bilkul aapnay sahi kaha ramazan main waqt kafi mushkil say milta hay dosri masrofiat kay, INSHA ALLAH main jalhi apkay spaces  main aaonga aur aapkay sawal ka jawab bhi doonga🙂
     
    Aur akhir main tammam logon ka shukarya jinhoonay Awara ko pasand kia, aur kar rahay hain.
     
    ALLAH HAFIZ

  9. Tarique says:

    Bheerh Main Ik Ajanabii Kaa Samna Achcha Lagaa Poet: Amjad Islam Amjad
     
    Bheerh Main Ik Ajanabii Kaa Samna Achcha Lagaa Sab Se Chup Kar Vo Kisi Kaa Dekha Achcha Laga Surmai Ankhon Ke Niche Phool Se Khilne Lage Kahate Kahate Kuchh Kisi Kaa Sochna Achcha Lagaa Baat To Kuchh Bhi Nahin Thi Lekin Us Kaa Ek Dam Haath Ko Honthon Pe Rakh Kar Rokna Achcha Lagaa Chaay Main Chini Milaana Us Ghari Bhaya Bahut Zer-E Lab Vo Muskurata Shukriyaa Achcha Lagaa Dil Main Kitne Ahad Bandhe The Bhulane Ke Use Vo Mila To Sab Iraade Torna Achcha Lagaa Beirada Lams Ki Vo Sansani Pyari Lagi Kam Tavajjo Aankh Kaa Vo Dekhna Achcha Lagaa Neem Shab Ki Khamushi Main Bheegti Sarkon Pe Kal Teri Yaadon Ke Jaalon Main Ghoomna Achcha Laga Us Uduu-E-Jaan Ko \’Amjad\’ Main Buraa Kaise Kahoon Jab Bhii Aayaa Samane Vo Bewafaa Achcha Laga
    After a long period of time I saw your space today, it’s great to see awara.
    Good job!
    Keep going!!!
     

  10. Tarique says:

    During the last 2 days, I tried to upload my photos of my last trip to the space, however, after I\’ve uploaded about 200 photos, I cannot upload anymore. The limitation from help system says that I can upload 500 photos every month. I just don\’t know why I can\’t upload any single photo anymore. To make it worse, I even can\’t modify my photo comment… anyone got the clue on how to solve this annoying problem???

  11. Tarique says:

    One more request… please SPEED UP the space… takes a long long time to load, to customize, to blog, to …., need a lot of patience to do anything on the space….

  12. Tarique says:

    Hello. Sorry for posting here, I don\’t know where to go for this problem😦 I recentry changed the permissions of my space from "Everyone" to "Custom" (selecting contact list and then nobody) as I needed to make some changes and didn\’t want people to access my space during that time. I then changed it back to "Everyone" but although it IS accessible to everyone, people on my messenger contact list cannot view my space updates in my contact card. Anybody know anything about this?

  13. Tarique says:

    یہ شاعری بھت اچھی ھے- ویسے مجھے نھیں پتا کے تم نے یہ کیا سوچ کر پوسٹ کیا ھے
     لیکن میں اتنا جانتی ھوں کہ اس میں کھیں نہ کھیں تمھاری کھانی بھی ھے-
     
    اس غزل کے بعد تمھاری شاعری کے پسند کی داد دینی پڑےگی- بھت خوب!!
     
    ایسے ھی لکھتے رھا کریں، میری دعائیں آپ کے ساتھ ھیں-

  14. Tarique says:

    اچھا لکھا ہے!!! نہایت اعلٰی

  15. Afifa says:

    راستے ميں رک کے دم لے لوں، ميري عادت نہيںلوٹ کر واپس چلا جاؤں، ميري فطرت نہيں اور کوئي ہم نوا مل جائے، يہ قسمت نہيں 
     
    اس مﻳں آخرى مصرعے پر مجھے اعتراض هے ۔ جب تک هم نوا کى تلاش نﮧ کى جاﺋے ﻳه مان لﻳنا کﮧ ھم نوا نصﻳب مﻳں نهﻳں ﻳه بات ٹھﻳک نﮧﻳں هاں اگر کوشش کے بعد بھى نﮧ ملے تو آپ ﻳﮧ شاﺋد کﮧﮧ سکتے ھﻳں مگر مﻳں تو تب بھى نﮧ کﮧوں جﻳسا کﮧ نﮧﻳں کﮧتى هوں آپ جانتے هﻳں ۔ باقى غزل کى خوبصورتى پر شبﮧ کرنا تو خود کو بدذوق کﮧلانے کے مترادف ھے۔

  16. Tarique says:

    Aawaara hoon, aawaara hoonYa gardish mein hoon aasmaan ka taara hoon
    Aawaara hoonGharbaar nahin, sansaar nahinMujhse kisi ko pyaar nahinUs paar kisi se milne ka ikraar nahinMujhse kisi ko pyaar nahinSunsaan nagar anjaan dagar ka pyaara hoonAawaara hoon, aawaara hoonYa gardish mein hoon aasmaan ka taara hoonAawaara hoonAabaad nahin barbaad sahiGaata hoon khushi ke geet magarZakhmon se bhara seena hai meraHansti hai magar yeh mast nazarDuniyaDuniya mein tere teer ka ya taqdeer ka maara hoonAawaara hoon, aawaara hoonYa gardish mein hoon aasmaan ka taara hoonAawaara hoon, aawaara hoon, aawaara hoon

Leave a Reply

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out / Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out / Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out / Change )

Google+ photo

You are commenting using your Google+ account. Log Out / Change )

Connecting to %s