اگر کبھی میری یاد آۓ

اگر کبھی میری یاد آۓ
تو چاند راتوں کی دلگیر روشنی میں
کسی ستارے کو دیکھ لینا
اگر وہ نخل فلک سے اڑ کر تمہارے قدموں میں آ گرے تو یہ جان لینا
وہ استعارہ تھا میرے دل کا
اگر نہ آۓ؟ ۔۔۔
مگر یہ ممکن ہی کس طرح ہے کہ کسی پر نگاہ ڈالو
تو اس کی دیوار جاں نہ ٹوٹے
وہ اپنی ہستی نہ بھول جاۓ!!
اگر کبھی میری یاد آۓ
گریز کرتی ہوا کی لہروں پہ ہاتھ رکھنا
میں خشبووں میں تمہیں ملوں گا
مجھے گلابوں کی پتیوں میں تلاش کرنا
میں اوس قطرہ کے آئینے میں تمہیں ملوں گا
اگر ستاروں میں، اوس خشبووں میں
نہ پاؤ مجھ کو
تو اپنے قدموں میں دیکھ لینا
میں گرد ہوتی مسافتوں میں تمہیں ملوں گا
کہیں پہ روشن چراغ دیکھو تو جان لینا
کہ ہر پتنگے کے ساتھ میں بھی سلگ چکا ہوں
تم اپنے ہاتھوں سے ان پتنگوں کی خاک دریا میں ڈال دینا
میں خاک بن کر سمندر میں سفر کروں گا
کسی نہ دیکھے ہوۓ جزیرے پہ رک کے تمہیں صدائیں دوں گا
سمندروں کے سفر پہ نکلو
تو اس جزیرے پہ کبھی اترنا!!
   
This entry was posted in شاعرى. Bookmark the permalink.

9 Responses to اگر کبھی میری یاد آۓ

  1. Unknown says:

    اسلام و علیکم
    بہت بہت شکریہ مبارکباد کا۔ چُنگی کھائی بھی جاتی ہے۔ اب سات آٹھھ کلو چاول ضائع تو نہیں کیے جا سکتے۔ مگر جس طرح سے چُنگی سجائی جاتی ہے اسے دیکھ کر دل چاہتا ہے کہ واقعی یہ اسی طرح سجی رہے، اسے کھایا نا جائے۔ حُنین کا اصل نام امیر حسین ہے۔ چونکہ یہ نام ہمارے دادا کا ہے اس لیے ہم اسے حنین بلاتے ہیں۔ دیگر دوست احباب اُسے امیر حسین کے نام سے ھی جانتے ہیں۔ اب میرے خیال سے کوئی دقت نہیں ھوگی بات سمجھنے کے لیے۔
    ویسے یہ بلوگ کافی اچھا ہے۔ بلکہ کافئ سے ذیادہ اچھا ہے.بے حد شاندار نظم۔۔۔ بہت کمال کا لکھا ہے۔ اس کا تخلیق کار کون ہے؟ضرور بتائیے گا۔ اب اجازت
    اپنااور آس پاس کے لوگوں کا خیال رکھیے گا
    اللہ حافظ

  2. Tarique says:

    یہ نظم امجد اسلام امجد کی ہے
    اسے آپ ابرار الحق کی آواز میں سن سکتے ہیں۔  شکريہ صبا اتنی تعريف کا۔
     

  3. Tarique says:

    Great Yaar!
     
    Kia entry mari hay!
     
    Aur background picture ki to kia baat hay
     
    best wishes for ur space

  4. Tarique says:

    again!
    its awesome!… looking forward to more updates🙂

  5. Tarique says:

    Chaudhavii.n kal raat kii thii shab bhar rahaa charchaa teraa Kuchh kahaa ne ye chaa.Nd hai kuchh kahaa 577-8 cheharaa teraa Ham bhii vahii.n maujuud the ham sab se bhii puuchhaa kiye Ha.Ns diye ham ham chup rahe manzuur thaa pardaa teraa Is shahar me.n kis se mile.n ham se to chhuuTii mahafile.n ShaKhs har har teraa naam le shaKhs diivaanaa teraa Kuuche tere ko kar chho.D jogii hii ban jaaye.n magar Jangal tere tere parbat bastii terii saharaa teraa Aur ham rasm-e-bandagii aashuftagii uftaadagii Ehasaan hai teraa kyaa kyaa ai husn-e-beparvaa teraa Ashk do jaane kis liye palko.n pe aa kar gaye Tik Altaaf kii baarish terii ikraam kaa dariyaa teraa Ai bedaareG-o-be_amaa.N ham ne hai kabhii kii fuGaa.N Ham ko terii vahashat sahii ham ko sahii saudaa teraa Tuu tuu bevafaa maharabaa.N tujh se aur ham bad-gumaa.N Ham ne to puuchhaa thaa zaraa ye vaqt kyuu.N Thaharaa teraa Ham par ye saKhtii kii nazar ham hai.n faqiir-e-rah_guzar Rastaa kabhii kabhii rokaa teraa daaman thaamaa teraa Haa.N haa.N terii suurat hasii.n lekin tuu aisaa bhii nahii.n Is shaKhs ashaar ke se shoharaa teraa kyaa huaa kyaa Beshak usii kaa hai dosh kahataa nahii.n hai Khaamosh Tuu aap kar aisii davaa biimaar ho achchhaa teraa Bedard sunanii ho to chal hai kyaa kahataa achchhii Gazal Aashiq teraa rusavaa teraa shaayar teraa "Inshaa" teraa

  6. Afzal says:

    Thanks for sharing best poetry. I hope you will keep writing as long as you are alive.
    http://www.mypakistan.com
     

  7. Tarique says:

    Salam,
     
    Bahtreen shairy hai, Amjad islam amjad ki.
    thanks for sharing.
    keep posting
     
    bye

  8. Tarique says:

    Best couplet is
    مگر یہ ممکن ہی کس طرح ہے کہ کسی پر نگاہ ڈالوتو اس کی دیوار جاں نہ ٹوٹےوہ اپنی ہستی نہ بھول جاۓ!!
     
    Damn great

  9. Tarique says:

    جب شب کے شکستہ زینوں سے مہتاب ابھرنے لگتے ہیںجب غم کے سرد الائو میں امیدیں بجھنے لگتی ہیںجب دل کے شوریدہ سمندر میں آوازیں مرنے لگتی ہیںجب موسم ہاتھ نہیں اتے جب تتلی بات نہیں کرتیجب زندہ رہنا اک بے معنی کام دکھائی دیتا ہےجب آنے والا ہر لمحہ دشنام دکھائی دیتا ہےجب یاد کے گہرے سناٹے میں چہرے گم ہو جاتے ہیںجب درد سے بوجھل آنکھوں میں گرداب سے پڑنے لگتے ہیںجب شمعیں گل ہو جاتی ہیں جب خواب بکھرنے لگتے ہیں
     
    اس وقت اگر تم آ جائواس وقت اگر تم آ جائو
     

Leave a Reply

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out / Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out / Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out / Change )

Google+ photo

You are commenting using your Google+ account. Log Out / Change )

Connecting to %s