شکست

شکست
 
بارہا مجھ سے کہا دل نے کہ اے شعبدہ گر
تو کہ الفاظ سے اصنام گري کرتا ہے
کبھي اس حسنِ دل آرا کي بھي تصوير بنا
جو تري سوچ کے خاکوں ميں لہو بھرتا ہے

 

بارہا دل نے يہ آواز سني اور چاہا
مان لوں مجھ سے جو وجدان ميرا کہتا ہے
ليکن اس عجز سے ہارا ميرے فن کا جادو
چاند کو چاند سے بڑھکر کوئي کيا کہتا ہے

 

احمد فراز

This entry was posted in شاعرى. Bookmark the permalink.

3 Responses to شکست

  1. Tarique says:

    کيا صرف مسلمانوں کے پيارے ہيں حسين چرخ ِ نوع ِ بشر کے تارے ہيں حسين انسان کو بيدار تو ہو لينے دو ہر قوم پکارے گي ہمارے ہيں حسين

  2. Imran says:

    u r right its song but……….  words are full of fells  that why its in my bio
     
    na gharaz kisi sa  na waasta mujha kam apna he kam sa
     
    tara zikar sa , tari fikar sa tari yaad sa tara naam sa
     
     

  3. Tarique says:

    یہ میری انا کی شکست ہے نہ دوا کرو نہ دعا کرو

    جو کرو تو اتنا کرم کرو مجھے میرے حال پہ چھوڑ دو

Leave a Reply

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out / Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out / Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out / Change )

Google+ photo

You are commenting using your Google+ account. Log Out / Change )

Connecting to %s