اعمال سے ميں اپنے بہت بے خبر چلا

اعمال سے ميں اپنے بہت بے خبر چلا
(مرزا محمد رفيع سودا)
 
اعمال سے ميں اپنے بہت بے خبر چلا
آيا تھا آہ کس لئے اور کيا ميں کر چلا

ہے فکر ِ وصل صبح تو اندوہ ِ ہجر شام
اس روز و شب کے دھندے ميں اب ميں تو مر چلا

کيا اس چمن ميں آن کے لے جائے گا کوئي
دامن کو ميرے سامنے گل جھاڑ کر چلا

طوفاں بھرے تھا پاني جن آنکھوں کے سامنے
آج ابر ان کے آگے زميں کر کے تر چلا

This entry was posted in شاعرى. Bookmark the permalink.

One Response to اعمال سے ميں اپنے بہت بے خبر چلا

  1. Unknown says:

    Laghta hay yeh aapki Apni kahani hay

Leave a Reply

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out / Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out / Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out / Change )

Google+ photo

You are commenting using your Google+ account. Log Out / Change )

Connecting to %s